بلوچستان بدل سکتا ہے!

تحریر: دلجان ہوت بلوچستان پاکستان کی وہ بدقسمت اکائی ہے کہ یہاں کے عوام ہزار ہا وسائل کے باوجود مختلف مسائل کا شکار ہیں۔ ان مسائل کی موجودگی کو بلوچستان کی نام نہاد لیڈران نے حل کرنے کے بجائے عوام مزید پڑھیں

شدت پسند تحریک کے روز مرہ زندگی پر منفی اثرات

تحریر: رحمین محمد حسنی بلوچستان کی علیحدگی پسندی کی تحریک کے نقصانات یوں تو بہت زیادہ ہیں، زندگی کے تمام شُعبے اس تشدد پسند تحریک سے متاثر ہو چکے ہیں۔ بلوچستان کی آبادی کے بڑے حصے کا تعلق دیہی علاقوں مزید پڑھیں

ترقی یافتہ دور اور شدت پسند تحریکوں کا مستقبل

تحریر: عبداللہ جان عالمی حالات کی تبدیلی اور کمیونیکیشن ٹیکنالوجی کی بے مثال ترقی نے دنیا کو یکجا کیا ہے۔ سات سمندر کا فاصلہ ہو یا زبان و کلچر کے اختلافات ہوں، اب ان کی کوئی ایسی اہمیت باقی نہیں مزید پڑھیں

لاپتہ افراد کی بازیابی: لواحقین اور انسانی حقوق تنظیموں کی زمہ داریاں

تحریر: رحمین بلوچ بلوچستان میں لاپتہ افراد کے مسئلے کو لیکر متعدد گروہ ریاستی اداروں کے خلاف پروپگنڈہ کررہے ہیں۔ لوگوں کی جبری گمشدگی یقیناََ ایک پریشان کن امر ہے، لیکن اصل صورت حال کو پس پُشت ڈال کر صرف مزید پڑھیں

بلوچستان امن چاہتا ہے!

تحریر: ھنین جان بلوچستان میں آزادی کے نام پر متحرک مسلح گروہوں کو جب بھی موقع ملے وہ معصوموں کا خون بہانے سے نہیں کتراتے۔ عوامی حمایت کھونے اور بیرونی ملک منتقل ہونے کے بعد ان مسلح تنظیموں کے لیڈران مزید پڑھیں

بلوچ کلچر ڈے

گواچن اداریہ آج دو مارچ پاکستان سمیت دنیا بھر کے بلوچ بطور کلچر ڈے مناتے ہیں۔ بلاشبہ ہزار سالہ بلوچ تاریخ کے ارتقائی مراحل کے دوران بلوچ کلچر بھی مختلف مراحل سے گزر کر ایک توانا کلچر بن چکا ہے۔ مزید پڑھیں